Headlines

    نابینا حکیم نے لڑکی کے نبض‌ پر ہاتھ رکھا تو ایک عجیب بات کہ ڈالی

    طب ایک پرانا علم ہے جس میں‌اسلام کے آنے کے بعد حیرت انگیز طور پر ترقی ہوئی اور اس میں‌ایسی اشیاء کا اضافہ کیا گیا جو کہ آج کل کے میڈیکل سانس میں‌کثرت سے استعمال ہوتے ہیں‌ ،اگرچہ اب قحط الرجال ہے لیکن تاریخ طب سے ہمیں ‌پتا چلتا ہے کہ ایسے لوگ ابھی بھی ہیں جن کی وجہ سے یہ فن پھیل رہا ہے۔

     

     

    Advertisement

    ’’ہندوستان کے نامور اطبا‘‘ ایک مشہور کتاب ہے جس میں مشہور ہندوستانی اطباء کے عجیب و غریب واقعات لکھے ہوئے ہیں‌ان میں‌ایک نابینا حکیم کا بھی ذکر ہے جو مریض کی نبض سے تمام حالات جان لیتے اور یہ بھی بتا سکتے تھے کہ نبض مرد کی ہے یا عورت کی ، مریض بچہ ہے یا بڑی عمر کا اور حکیم صاحب ساتھ ساتھ ہر ایک کو تفصیلی حالت بتا رہے ہیں‌۔

     

     

    Advertisement

    مجھے حیرانگی ہوئی کہ حکیم صاحب نے کسی سے بھی اس کی حالت کا نہیں پوچھا خود ہی ہر بیمار کی مفصل کیفیت نبض دیکھ کر بتا دی اور ہر بیمار نے تصدیق کی کہ بیشک یہی حال ہے.

     

     

    Advertisement

     

    اس وقتمیری حیرانگی پر مہاراجہ صاحب ہنسنے لگے اور کہا کہ میں ‌نے انہیں‌حیدر آباد میں رانی کی نبض کی جگہ اپنا ہاتھ پکڑایا تو حکیم صاحب مسکرا کر کہنے لگے کہ یہ تو راجہ صاحب کا ہاتھ ہے رانی صاحبہ کا ایسا ہاتھ ہے ہی نہیں۔

    Advertisement