Headlines

    ‘بلبلے’ ڈرامہ میں پٹھان بھائیوں کی تذلیل کی وجہ سے ARY کے خلاف بائکاٹ مہم عروج پر

     ڈیجیٹل چینل اے آر وآئے کو پختونوں اور پٹھانوں کے خلاف اپنی نشریات میں کی جانے والے توہین کی وجہ سے ٹویٹر پر تنقید کا شدید نشانہ بناتے ہوئے سب سے اوّل پر اس کا ٹویٹر ٹرینڈ چل رہا ہے۔

    If it has happened in any western country, they would have banned the channel long ago. #پشتون_بہ_منے #BoycottAryDigital pic.twitter.com/z3NLPPdHxx

    — Khan (@IamAKhan_) July 23, 2020

    Advertisement

    تفصیلات کے مطابق اے آر وائے کے مشہور زمانہ ڈرامہ ‘بلبلے‘ کی ایک قسط میں دو اداکاروں کی موبائل فون پہ گفتگو سنائی اور دیکھائ جاتی ہے۔ جس میں اداکار جو کہ مشہور کردار محمود ہیں، اس کو ایک پٹھان پختون دوست کا فون آتا ہے، اور وہ ایک دوسرے کو عید مبارک باد دیتے ہیے۔ اور پٹھان دوست محمود کے گھر آنے کی خواہش ظاہر کرتا ہے، جس پر محمود کال کو ہولڈ پر کر کے اپنے بیٹے اور فیملی کے ساتھ اس کو گھر بلانے کے بارے میں گفتگو کرتا ہے۔ اور اس کا بیٹا آپنی رائے کا اظہار کرت ہوئے یہ الفاظ کہتا ہے کہ وہ گھر میں کیا لے کر آ سکتا ہے یا تو یا تو نسوار یا پھر بُومب لے کر آئے گا۔

    Advertisement

    Advertisement

     

    ڈرامہ میں پختون کلچر اور ثقافت کے بارے میں اس طرح کی رائے کا اظہار کرنے کی وجہ سے پاکستانی قوم نے ٹوئٹر پر ایک بوچھار برپا کردیا اور آے آر وآئے کا بائیکاٹ کرنے کے لیے کمپین شروع کر دی۔

    https://twitter.com/asjad32official/status/1286235682294439943?s=19

    مزید اس بارے میں لوگوں نے یہ کہا کہ اس کا لائسنس سسپینڈ ہو جانا چاہیے کیونکہ یہ اس قابل نہیں ہے کہ اس کے مزید پروگرام دیکھے جائیں اور یہ ملک کو توڑنے کے لئے اس طرح کے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے تاکہ قوم آپس میں تقسیم ہو کر پاکستان کے خلاف لوگوں کا ایجنڈا پورا کر سکیں۔

    دوسری طرف کئی لوگوں نے اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ اے آروائی والوں کو اس بارے میں معافی مانگنی چاہیے قوم سے اور اس بات کا حلف لینا چاہیے کہ آئندہ ایسی کوئی بھی غلط حرکت نہیں کریں گے۔

    تاہم ابھی تک اے آر وائی ڈیجیٹل چینل کی طرف سے اس بات کی کوئی وضاحت سامنے نہیں آئی۔

    Advertisement