سکولز کُھلنے کے حوالے سے تحقیقاتی رپورٹ کے حیرت انگیز انکشافات، والدین کو وارننگ

    امریکن میڈیکل ایسوسی ایشن کا جریدہ برائے بچوں کے امراض کی ایک نئی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ پانچ سال سے کم عمر بچوں میں بڑوں کے مقابلے میں کورونا وائرس پھیلنے کا زیادہ امکان ہے۔

     

    اس کے مصنفین نے لکھا ہے کہ اس کا مطلب یہ ہے کہ کرونا کے اہم ڈرائیور یعنی اسکو پھلانے والے بچے ہوسکتے ہیں۔

    Advertisement

     

    یہ مقالہ اس وقت سامنے آیا ہے جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ معیشت کو دھکا دینے لئے اسکولوں اور ڈے کیئر سنٹرز کو دوبارہ کھولنے پر زور دے رہی ہے۔

     

    Advertisement

    مزید جانئے: عید کے موقع پر بدہضمی سے بچنے کا آسان ترین علاج، آپ بھی اس فائدہ اُٹھائے اور آپنے پیاروں کو بھی بتایئں

     

    مارچ 23 سے 27 اپریل کے درمیان، محققین نے علامتی آغاز کے ایک ہفتے کے اندر 145 شکاگو مریضوں کے ناک کے ذریعے ٹیسٹ کیۓ۔

    Advertisement

    مریضوں کو تین گروپوں میں تقسیم کیا گیا تھا: 46 بچے پانچ سال سے کم عمر کے تھے، پانچ سے 17

    سال کی عمر کے 51 بچے تھے اور 18 سے 65 سال کی عمر کے 48 بالغ افراد تھے۔

    این اور رابرٹ ایچ لوری چلڈرن ہسپتال کے ڈاکٹر ٹیلر ہیلڈ سرجنٹ کی سربراہی میں بننے والی اس ٹیم نے چھوٹے بچوں کے سانس کی نالی میں 10 گنا سے 100 گنا زیادہ سارک – کو –  2 کی مقدار دیکھی۔

    Advertisement

    مصنفین نے مزید کہا کہ حالیہ لیب مطالعہ سے ثابت ہوا ہے کہ جینیاتی مواد جتنا زیادہ وائرل ہوتا ہے، اس سے اُتنے ہی زیادہ متعدی وائرس بڑھ سکتا ہے۔

     

    اس سے قبل یہ بھی دکھایا گیا ہے کہ سانس کی سنسینٹل وائرس (آر ایس وی) کے متاثرہ بچوں میں اس بیماری کے پھیلاؤ کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔

    Advertisement

     

    مصنفین نے لکھا ہے کہ اس طرح، چھوٹے بچے عام طور پر پھیلنے والے سارک – کو -2 کے اہم ڈرائیور ثابت ہوسکتے ہیں۔

     

    Advertisement

    انہوں نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ اگر صحت عامہ کی پابندیوں کو کم کیا جاتا ہے، تو چھوٹے بچوں کی طرز عمل کی عادات اور اسکول اور دیکھ بھال کی ترتیبات ادارے سارک – کو -2 کی پرورش میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔

     

    یہ نئے انکشافات صحت کے احکام کے مابین موجودہ نظریے سے متصادم ہیں، کہ چھوٹے بچے – جو اچھی طرح سے تندرست ہیں، انہیں وائرس سے سنگین بیمار ہونے کا امکان بہت کم ہیں- اور وہ دوسروں تک بھی اس کو زیادہ نہیں پھیلاتے ہیں۔

    Advertisement

     

    مزید پرھیۓ: ماں ماں ہی ہوتی ہے۔ بیٹے کا ماں پر شدید تشدد کے باوجود ماں نے بیٹے کے ساتھ کیا کر دیا

     

    Advertisement

    تاہم، ابھی تک اس موضوع پر کوئ جامعہ تسلی بخش تحقیق سامنے نھیں آئ جس سے سب متفق ہو۔