214 روپے فی کلو لی گئی مرغی مارکیٹ میں 500 روپے کلو فروخت، مارکیٹ میں کہرام مچ گیا، پھر کہتے حکومت نہیں ٹھیک۔

    کراچی (اعتماد ٹی وی) گائے میں لمپی اسکن کی بیماری کی شناخت کی وجہ سے گائے کے گوشت کی فروخت میں کمی ہو گئی ہے۔ اس کمی کو پورا کرنے کے لئے ہول سیلرز اور پولٹری فارم مالکان نے اپنی من مانی کرنی شروع کر دی ہے۔

     

     

    Advertisement

    حکومت کی جانب سے مرغی کی مقررہ کردہ قیمت 214 روپے ہے جبکہ بازار میں مرغی کا گوشت 500 روپے فی کلو فروخت کیا جا رہا ہے۔ حکومت اس سلسلے میں تماشائی بن کر بیٹھی ہے۔

     

     

    Advertisement

    شہریوں کے مطابق ملک میں قوانین کا مذاق بنانا عام بات ہو گئی ہے ۔ سرکار کی مقرر کردہ قیمتوں کا اطلاق ہوتا ہی نہیں ہر دُکاندار اپنی مرضی کے ریٹ رکھ کر چیز فروخت کر رہا ہے۔

     

     

    Advertisement

    جب کہ مرغی فروخت کرنے والوں کے مطابق پولٹری فارم سے مرغی 315 روپے فی کلو وصول کی جا رہی ہے۔ اس لئے مرغی کو 500 روپے سے کم فروخت نہیں کیا جا سکتا۔

     

     

    Advertisement

     

    انتظامیہ کا اس میں کردار صفر ہے ۔ گھریلو مرغی کی پیدا وار نا ہونے کے برابر ہے ۔ اور مرغی کے آئے دن ریٹ میں اضافے کے باعث اس کی فروخت میں کمی آگئی ہے۔ اس کمی کا اثر کمرشل سطح پر بھی ہو رہا ہے۔

     

    Advertisement

     

     

    حکومت و انتظامہ کو سرکاری سطح پر مقرر کردہ قیمتوں کے اطلاق کو یقینی بنانا چاہیے ۔ مرغی کے ساتھ ساتھ روزمرہ ضروریات کی اشیا بھی دوکاندار من مانی قیمتوں پر فروخت کر رہے ہیں۔

    Advertisement

     

     

     

    Advertisement