عثمان بزدار کا استعفیٰ غیر آئینی قرار، پنجاب میں نیا بحران بڑپا

    عثمان بزدار کا استعفیٰ غیر آئینی تھا۔گورنر پنجاب عمر سرفراز چیمہ

    لاہور (اعتماد ٹی وی) کے مطابق گورنر پنجاب پر عدالت کی جانب سے زور دیا جا رہا ہے کہ وہ حمزہ شہباز شریف کا حلف لیں۔ جس پر گورنر نے کہا کہ عدلیہ کے پاس کوئی اختیار نہیں حکم دینے کا۔ حمزہ شہباز کی پنجاب اسمبلی میں ووٹنگ ہی غیر آئینی قدم تھا تو پھر حلف کیسا۔

     

    Advertisement

    گزشتہ روز قومی اسمبلی کے اسپیکر راجہ پرویز اشرف کی جانب سے حکم دیا گیا کہ نو منتخب وزیراعلیٰ پنجاب کا حلف آج ساڑھے گیا رہ بجے تک لے لیا جائے۔گورنر پنجاب نے کہا کہ جب عثمان بزدار کا استعفیٰ ہی غیر آئینی ہے تو پھر میں کیسے کسی نئے وزیراعلیٰ کا حلف لوں ۔ یہ کہتے ہوئے انھوں نے پنجاب کی کابینہ کو بحا ل کر دیا ہے۔

    گورنر پنجاب نے استعفیٰ کے غیر آئینی ہونے کے متعلق اسپیکر پنجاب اسمبلی کو خط لکھ دیا ہے جس پر اسپیکر پنجاب اسمبلی نے بھی تصدیق کر دی ہے کہ خط مجھے مل چکا ہے۔ خط میں گورنر کی جانب سے کہا گیا ہے کہ عثمان بزدار کا استعفیٰ غیر آئینی ہے آٹیکل 130 کے سب سیکشن 8 کے تقاضے پورے نہیں کر رہا۔

     

    Advertisement

    اس کے مطابق استعفیٰ گورنر کے نام ہونا چاہیے جو کہ استعفیٰ وزیراعظم کے نام ہے۔ یہ آئینی طور پر غلط ہے اس کے ساتھ ساتھ استعفیٰ ہاتھ سے لکھا ہونا چاہیے۔ جو استعفیٰ دیا گیا ہے وہ ہاتھ سے لکھا ہوا بھی نہیں اس لئے پنجاب کی کابینہ بحال کرتے ہوئے استعفیٰ مسترد کیا جاتا ہے۔

     

    Advertisement