دنیا کا سب سے بڑا 660 کلو میٹر لمبا ڈیم، جو زمین کی گردش کو بھی متاثر کر رہا ہے، اس کے بارے میں حیران کن حقائق جان کر آپ بھی پریشان ہوجائینگے

    دنیا میں ایک ایسا ڈیم بھی موجود ہے جو زمین کی گردش کو مسلسل متاثر کر رہا ہے۔

     

     

    Advertisement

    آن لائن ( اعتماد ٹی وی) جیسا کہ سب جانتے ہیں نظام شمسی میں موجود سیارے سورج کے گرد گردش کر رہے ہیں اور اپنی مدت مکمل کر تے ہیں۔ ان کی یہ گردش   دنیا کے ابد سے جاری ہے اور ازل تک جاری رہے گی۔

     

     

    Advertisement

    خلاء میں موجود مختلف حادثوں کی وجہ سے ان کی گردش پر اثر پڑتا ہے جو کہ بہت کم ہوتا ہے۔

     

     

    Advertisement

    زمین ایسا سیارہ ہے جہاں زندگی ممکن ہے اور یہاں ایک ایسا ڈیم بھی موجود ہے جس کی وجہ سے زمینی گردش متاثر ہوتی ہے  ۔

     

     

    Advertisement

    یہ ڈیم چین کے شہر ہوبے میں موجود ہے ۔  یہ ڈیم دنیا کا سب سے بڑا ڈیم ہے اور اس کا نام تھری گورجز ڈیم ہے۔ اس ڈیم کی خاصیت یہ ہے کہ اس میں 39 ٹریلین کلو پانی اسٹور کیا جاسکتا ہے۔

     

     

    Advertisement

    اس کی پیداواری صلاحیت 23 ہزار میگا واٹ ہے احاطہ 660 کلو میٹر لمبا اور 1.12 کلو میٹر چوڑا ہے۔

     

    جب یہ ڈیم مکمل بھر جاتا ہے تو  زمین کی گردش پر اثر انداز ہوتا ہے۔ چونکہ یہ ڈیم سطح سمند ر سے 175 میٹر کی بلندی پر  بنایا گیا ہے۔اسی وجہ سے زمینی کی گردش پر اثر انداز ہوتا ہے ۔

    Advertisement

     

     

    اس کے بھرنے کی وجہ سے زمین کا انرشیا متاثر ہوتا ہے ۔ انرشیا کا کام کسی جسم کو مسلسل حرکت میں رکھنا ہوتا ہے اس لئے جب  زمین کا انرشیا متاثر ہوتا ہے تو اس کی گردش میں ہلکی سے تبدیلی آتی ہے۔

    Advertisement

     

    جو کہ 0.06 مائیکرو سینڈ  زمینی دن کو کم کر دیتی ہے۔ اس لئے یہ اثر معمولی خیال کیا جاتا ہے  اتنا اثر زمین کی گردش میں زمینی ہلچل کے باعث بھی آتا ہے۔

     

    Advertisement

     

    اس ڈیم کے بنانے میں پانچ لاکھ ٹن اسٹیل استعمال ہوئی ہے۔ ڈیم کی تعمیر کا مقصد  بجلی بنانا اور سیلاب سے بچاؤ کرنا ہیں ۔ ڈیم کی تعمیر میں لاگت 37 ارب ڈالر تک رہی ہے اس ڈیم کی تعمیر میں کئی دہائیاں لگی ہیں اور ابھی بھی اس میں کام جاری ہے ۔

     

    Advertisement

     

    اس کے لئے 12 لاکھ لوگوں کو ہجرت کرنی پڑی ۔اس ڈیم کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ اس کے ذریعے پورے چین کو بجلی فراہم کی جار ہی ہے۔

     

    Advertisement