ان کی مونچھیں یا داڑھی کیوں نہیں ہوتی، چین اور جاپان کے مردوں کے چہرے پر بال نہ ہونے کی دلچسپ وجوہات جانیں

    داڑھی چہرے کی خوبصورتی میں اضافہ کرتی ہے لیکن چین اور جاپان کے مردوں میں یہ نہیں دیکھا گیا ۔

     

    لاہور (اعتماد ٹی وی) دنیا بھر کے مختلف ممالک میں دیکھا گیا ہے کہ جب بھی لڑکا بلوغت کی عمر کو پہنچتا ہے تو اس کے چہرے پر مونچھیں اور داڑھی آنا شروع ہو جاتی ہے جو کہ اس بات کو ظاہر کرتی ہے کہ لڑکا اب جوانی کی حدود میں داخل ہو چکا ہے ۔

    Advertisement

     

    ایسا عموماً تما م ممالک کے افراد میں دیکھا گیا ہے ۔ لیکن چین اور جاپان دو ایسے ملک ہیں جن کے مردوں کے چہروں پر داڑھی اور مونچھیں نہیں دیکھی گئی۔ اور ان کے چہرے کی جلد دیکھ کر لگتا ہے کہ ان کے چہرے پر بال آتے ہی نہیں ۔

     

    Advertisement

    ایسا بالکل نہیں ہے چین اور جاپان کے مردوں کے چہرے پر بھی بال اُگتے ہیں لیکن ان کی افزائش بہت کم ہوتی ہے اس لئے و ہ اتنے نمایا ں نہیں ہوتے ۔ دوسرا چینی ثقافت میں بھی کلین شیو کا رواج ہے اس لئے وہاں کے لوگ زیادہ تر کلین شیو کو ترجیح دیتے ہیں۔

     

    دوسری وجہ یہ بھی ہے کہ انسان کی ظاہری شکل اس کے ڈی این اے کا نتیجہ ہوتی ہے ۔ اس لئے انسان میں وہ خصوصیات پیدا ہوتی ہیں جو اس کو وراثت میں ملتی ہیں۔ تو چین اور جاپان میں چونکہ بالوں کی افزائش ہی کم ہوتی ہے اس لئے ان کے چہرے شفاف ہوتے ہیں۔ا ن کے چہروں پر ایسے مسام ہی بہت کم ہوتے ہیں جو بالوں کی افزائش کرتے ہیں۔

    Advertisement

     

    اس کے علاوہ بال کی افزائش بڑھانے کا ذریعہ ایک ہارمون ہوتا ہے جس کو ٹیسٹرون کہتے ہیں۔ یہ ہارمون ایشیائی باشندوں میں چین کے باشندوں کی نسبت زیادہ ہوتا ہے اس لئے ایشیائی ممالک میں ہر دوسرے مرد کے چہرے پر داڑھی ہوتی ہے کچھ کی گھنی اور کچھ کی نارمل۔

     

    Advertisement

    چین اور جاپان کے باشندوں کے چہرے پر بالوں کی افزائش مخصوص حصوں میں ہوتی ہے جن ٹھوڑی اور ہونٹوں کے اوپر کی جگہ ہے باقی چہرے پر نہ ہونے کے برابر بال ہوتے ہیں۔ اس لئے یہاں کے مرد زیادہ پرکشش اور حسین نظر آتے ہیں۔

     

     

    Advertisement