حکومت کا ایک اور کارنامہ مریض اور ان کے لواحقین در بدر خوار ہونے لگے۔

    حکومت کا ایک اور کارنامہ پنجاب بھر سے ادویات غائب ۔

     

    لاہور (اعتماد ٹی وی) حکومت کے لگائے گئے ٹیکسز کی وجہ سے پنجاب بھر میں جان بچانے والی دوائیوں کی قلت ہو گئی۔ذرائع کے مطابق بخار اور درد کے لئے استعمال ہونے والی پینا ڈول بھی مارکیٹ سے غائب ہو گی ہے اس کے علاوہ ذہنی تناؤ، دمہ ، جوڑوں کے درد اور کینسر کے علاج سے متعلقہ ادویات بھی مارکیٹ میں موجود نہیں۔

    Advertisement

     

    دل کا دورہ روکنے والی، خون پتلا کرنے والی، دل میں جلن، ہیپا ٹائٹس ، بلڈ پریشر اور پھیپھڑوں کے انفکیشن سے متعلقہ ادویات بھی مارکیٹ میں دستیاب نہیں ہیں۔ صوبے بھر میں 40سے زائد ایسی ادویات ہیں جن کی قلت کی وجہ سے مریضوں کو بہت سے مشکلات کا سامنا کرنا پڑھ رہا ہے۔

     

    Advertisement

    پاکستان فارما سیوٹیکل مینو فیکچرز ایسویسی ایشنز کا اس متعلق کہنا ہے کہ وفاقی حکومت نے سیلز ٹیکس اتنا زیادہ بڑھا دیا ہے جس کی وجہ سے خام مال کی ایمپورٹ رُ ک گئی ہے سیلز ٹیکس میں اضافے کی وجہ سے ادویات کی پیداواری لاگت میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

     

    ایسوسی ایشن کے مطابق سیلز ٹیکس ختم ہو گا تو ہی ادویات کی مینو فیکچرنگ ممکن ہے۔

    Advertisement

     

     

    Advertisement