سبحان اللہ! ہر نبی نے اپنا اختیار استعمال کیا لیکن میرے نبی کریمﷺ نے وہ اختیار آخرت مین استعمال کرنے کی درخواست کی اور اللہ نے۔۔۔۔

    مولانا طارق جمیل نے ایسا واقعہ سنایا کہ ہر کوئی اپنا احتساب کرنے پر مجبور ہو جائے۔

     

    لاہور (اعتماد ٹی وی) مومن کی میراث ہے اس کا دین ۔ دین یعنی عقیدہ اور ایک مسلمان کا عقیدہ ہے اللہ ایک ہے اور حضورؐ اس کے آخری نبی ہیں۔ اس بات پر یقین اور اقرار سے انسان مسلمان کہلاتا ہے۔ دنیا میں اب تک جتنے بھی نبی آئے سب کے پاس دعا کا حق تھا ۔ جو انھوں نے استعمال کیا ۔

    Advertisement

     

    حضور کریمﷺ واحد ایک ایسے نبی ہیں جنہوں نے اپنا وہ حق قیامت کے روز استعمال کرنے کی درخواست کی جو اللہ نے قبول کی۔ ہر نبی اپنی اُمت کی جانب اللہ کا پیغام لےکر آیا ۔ جس کے بدلے میں قوم نے ان کے ساتھ بدسلوکی اور نتائج بھگتے ۔ اللہ کے محبوب رسول کریمﷺ بھی دین اسلام لائے ۔

     

    Advertisement

    لوگوں کو جینے کے اقدار سکھائے انسان کو بتایا کہ زندہ رہنے کے لئے تو جانور بھی کھاتے پیتے ہیں لیکن انسان اور جانور میں واضح فرق ہے انسان کو اللہ نے اشرف المخلوقات بنایا ہے تو اس کا ظرف اتنا وسیع ہو کہ یہ گناہوں سے توبہ کرکے عاجزی والی زندگی گزارے ۔

     

    حضور ؐ نے فرمایا کہ میں اپنی اُمت سے ہر گناہ کی توقع رکھتا ہوں۔ کیونکہ میری اُمت میں ہر وہ برُائی موجود ہو گی جو پہلے اُمتوں میں موجود تھیں۔

    Advertisement

     

    اس کے برعکس میں یہ اُمید کرتا ہوں کہ میری اُمت یہ دو کام ہر گز ہر گز نہیں کرے گی۔ ایک تو جھوٹ بولنا۔اور دوسرا دھوکہ کبھی نہیں دے گا۔تو کیا ہم اپنے نبی کی اس اُمید پر پورے اُترتے ہیں ؟ یہی احتساب کا وقت ہے ہر شخص اپنا احتساب کرے تو خود ہی پتہ چل جائے گا ۔

     

    Advertisement