Headlines

    حکومت پاکستان نے حاملہ عورتوں کے لئے بڑی خوشخبری کا اعلان کر دیا۔ بیٹا یا بیٹی کی پیدائش پر وضیفہ۔۔

    اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے سماجی تحفظ اور احساس پروگرام کی چیئرپرسن ڈاکٹر ثانیہ نشتر کا کہنا ہے کہ پاکستان میں احساس نشونما پرگرام کا آغاز ہو چکا ہے، جس میں نو اضلاع میں تیتیس مراکز اس پرگارام کے لئے بنا ریے گۓ ہیں
    پاکستان کے دارلحکومت میں صحافیوں سے بات کرتے ہوۓ، ثانیہ نشتر نے بتایا کہ احساس پروگرام خیبر پختونخوا میں نیا پروگرام شروع ہورہا ہے، جسکے وزیراعظم بذات خد معمالات دیکھے گے، یہ پروگرام غذائی قلت سے نمٹنے کے لئے، حکومت نے تشکیل دیا۔

    مزید پڑھیں: موجودہ دور کے بچے بدتمیز کیوں ہوتے جارہے ہیں 5 وجوہات

    انھوں نے مزید بتایا کہ احساس نشوونما پروگرام کے ذریعے ایک گھر کے دو بچوں کی مدد کی جائے گی، جس میں والدہ کو لڑکا ہونے پر 1500 اور لڑکی کی پیدائش پر 2000 روپے ماہانہ دیے جائے گے۔
    تفصیلات کے مطابق، بچے کی پیدائش پر 15 ماہ تک خواتین اس پروگرام سے مستفید ہوں سکےگی، اس کے ساتھ ساتھ، احساس نشوونما کے بعد احساس تعلیم کا آغاز بھی کیا جائے گا۔

    Advertisement

    معاون خصوصی کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعظم نے پہلی تقریر میں ہی غذائی قلت کی وجہ سے متاثر ہونے والے بچوں کا ذکر کیا تھا، یہ پہلی حکومت ہے جس نے غذائی قلت سے متعلق عملی اقدامات کیے۔ تحقیق کے مطابق، قبائلی علاقوں میں غذائی قلت سے متاثرہ لوگوں کی شرح باقی شہروں سے زیادہ ہے اور وہاں 48 فیصد بچے غذائی قلت کا شکار ہیں۔
    نشتر نے وضاحت کی کہ فی الحال 8 مراکز کام میں عملی طور پر کام جاری ہے۔ مزید، اگست کے آخر تک تمام 9 اضلاع کے 33 مراکز کھل جائیں گے۔