ضلعی ہسپتال قصور میں عوام کا سوشل میڈیا کا استعمال کرتے ہوئے عجیب احتجاج

    ضلعی ہسپتال قصور میں عوام کا سوشل میڈیا کا استعمال کرتے ہوئے عجیب احتجاج

     

    اعتماد ٹی وی! یوں تو سوشل میڈیا بہت سے نا پاک ارادوں اور کاروائیوں کے لئے مشہور ہیں مگر اس دفعہ جو خبر ہے وہ آپ کو سوشل میڈیا کے مثبت استعمال سے حیران کر دے گی۔

    Advertisement

     

     

    تفصیلات کے مطابق، پاکستان کے صوبہ پنجاب کے ضلع قصور میں واقع ضلعی ہسپتال شہریوں کی طرف سے شدید تنقید کا باعث بنا ہے۔ شہریوں نے لسانی بنیاد پر اس کے خلاف احتجاج کرنا شروع کر دیا ہے۔

    Advertisement

     

     

    شہریوں کے مطابق، پورے ضلع کا یہ ایک مرکزی ہسپتال ہے لیکن جب بھی کوئی مریض یہاں پر لے کر جایا جائے تو اکثر یہی سننے کو ملتا ہے کہ “اسے لاہور لے جاؤ”۔

    Advertisement

     

     

    لوگوں نے ہسپتال کے عملے کے اس جملے سے تنگ آ کر یہ جملہ سوشل میڈیا پر شئیر کرنا شروع کر دیا، اور دیکھتے ہی دیکھتے یہ سوشل میڈیا پر ٹرول ہونے لگ پڑا۔

    Advertisement

     

     

    آپ کو بتاتے چلے کہ حالیہ ہی ایک وکیل کی وفات کا واقعہ بھی اس سارے معاملے میں زیر بحث لایا جا رہا ہے، جس کی بہرحال ابھی تک کوئی واضح تفصیل سامنے نہیں آئی۔

    Advertisement

     

     

    اسی سلسلے میں ایک شہری سے بات چیت ہوئی، جس نے اپنا نام نا بتانے پر آگاہ کیا کہ چند دن پہلے وہ رات 12 بجے اپنے 1 سال کی بیٹی کو لے کر ہسپتال میں آیا تو ایمرجنسی میں بہت رش لگا ہوا تھا اور صرف 2 ڈاکٹر موجود تھے۔

    Advertisement

     

     

    جس میں سے ایک ڈاکٹر پھر وارڈ میں چلا گیا اور دوسری ڈاکٹر بریانی کا ڈبہ کھول کر کھانے لگ پڑی۔ جبکہ مریضوں کی قطار کمرے سے باہر منہ دیکھ رہی تھی۔

    Advertisement

     

     

    عوام کے طرف سے صاحب اقتدار سے التجا کی جا رہی ہے کہ ہسپتال میں مناسب اسٹاف کے ساتھ جدید مشینوں کی موجودگی کو بھی یقینی بنایا جائے اور عملے کو بھی ہدایت کی جائے کہ وہ لوگوں کی مدد کرے ناکہ ان کے لئے مشکلات کا باعث بنے۔

    Advertisement

     

     

    Advertisement