Headlines

    پاکستانی حکومت نے قوم کا کروڑوں روپے کا اثاثہ بچا لیا، پاکستان کے خلاف اصل سازش سامنے آگئ

    نیویارک میں پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز (پی آئی اے) کے زیر ملکیت روزویلٹ ہوٹل نے کوویڈ 19 وبا کے سبب مالی نقصان کا سامنا کرنے کے بعد اپنے دروازے بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔

     

    وفاقی وزیر نے بتایا کہ اکنامک حالات کے خراب ہونے کے دوران جےپی مورگن بینک نے ہوٹل روزویلٹ کو دیا گیا قرض ایک نجی کمپنی کو بیچ دیا۔ پھر نجی کمپنی خود روزویلٹ کی ملکیت حاصل کرنا چاہتی تھی، اس کمپنی جان بوجھ کر آمدنی نہ ہونے کا بہانہ بنا کر ایک سو پانچ ملین ڈالر قرض کی رقم فوری واپس مانگ لی۔بصورت دیگر پراپرٹی ٹیک اوور کرنے کی کاروائی کا آغاز کرنے کا عندیہ دے دیا۔ پی آئی اے انتظامیہ کی درخواست پر وزارت ہوابازی اور وزارت خزانہ نے تمام قرض یک مشت نیشنل بنک سے قرض کی ادائیگی  کروا قومی اثاثے کو بچا لیا

    Advertisement

     

    اسی وجہ کی بنا پر اپنی ویب سائٹ پر جاری ایک پیغام میں ، روزویلٹ ہوٹل نے اعلان کیا کہ موجودہ اقتصادی اثرات کی وجہ سے ، “گرینڈ ڈیم آف نیو یارک” کے 100 سالوں کے مہمانوں کے استقبال کے بعد ، وہ افسوس کے ساتھ 31 دسمبر 2020 سے اپنے دروازوں کو مستقل طور پر بند کر رہا ہے۔

     

    Advertisement

    ہوٹل میں عملے اور مہمانوں کی تعریف کی گئی جو ان کے نو دہائی پرانے سفر کا حصہ بنے رہے۔ اس نے مزید مہمانوں کے لئے متبادل رہائش کا بندوبست کرنے کا اعلان کیا ہے جو پہلے ہی ہوٹل میں بکنگ دے چکے ہیں۔

     

    روزویلٹ ہوٹل ، جو 1924 میں قائم ہوا ، امریکہ کے تاریخی ہوٹلوں میں سے ایک ہے اور یہ مینہٹن کے پُر حصول شہر میں واقع ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی ہوٹل کی عمارت خریدنے کی پیش کش کی تھی۔

    Advertisement

     

    پی آئی اے نے یہ ہوٹل 1969 میں لیز پر حاصل کیا تھا اور 2005 میں اس کی ملکیت حاصل کی تھی۔ فی الحال ، ہوٹل کی مالیت 1 بلین امریکی ڈالر سے زیادہ ہے۔

    امریکہ کے شہر منہٹن میں پی آئی اے کے زیر ملکیت ہوٹل کی مالیاتی ضروریات اور بحالی کے لئے 142 ملین ڈالرز کی رقم کی منظوری دی گئی تھی ، تاکہ ہوٹل کے قرض اور دیگر ادائیگیاں کی جاسکیں۔

    Advertisement