مسلم لیگ (ن) کے ایم پی اے نے جلیل احمد شرقپوری کے سر پر لوٹا رکھا اور۔۔۔ بات اگے تک پہنچ گئی۔

    پاکستان مسلم لیگ نواز (مسلم لیگ ن) کے صوبائی اسمبلی کے ارکان نے جمعہ کے روز مسلم لیگ (ن) کے ایم پی اے جلیل احمد شرق پوری کے ساتھ بد سلوکی کی اور ان کے سر پر ’لوٹا‘ رکھا۔

     

    تفصیلات کے مطابق ، مسلم لیگ (ن) کے ایم پی اے نے اپنی ہی پارٹی کے رہنما جلیل احمد شرق پوری کے ساتھ بدتمیزی کی اور ان سے اسمبلی کے اپوزیشن کے چیمبر چھوڑنے کو کہا۔

    Advertisement

     

    مسلم لیگ (ن) کے پنجاب کے دو ایم پی اے میاں عبدالرؤف اور مرزا جاوید نے ناراض مسلم لیگ (ن) کے ایم پی اے شرق پوری کے سر پر ’لوٹا‘ لگایا اور ان کے خلاف نعرے بازی کی۔

     

    Advertisement

     

    اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ، جلیل شرق پوری نے کہا کہ ان کی پارٹی کے اراکین اسمبلی نے بھی پنجاب اسمبلی کی سیڑھیوں پر ان کے ساتھ بدتمیزی کی۔ انہوں نے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز سے مطالبہ کیا کہ وہ ان کے ساتھ ‘غیرانسانی سلوک’ کا سختی سے نوٹس لیں۔

     

    Advertisement

    سیاسی جماعت سے معطل ہونے کے بعد قومی اداروں کے خلاف نواز شریف کی تنقید کی مخالفت کرنے کے نتائج جلیل احمد شرقپوری کو بھگتنا پڑا۔

     

    پچھلے ماہ ، پنجاب اسمبلی میں پاکستان مسلم لیگ نواز (مسلم لیگ ن) کے ارنجدہ قانون ساز ، جلیل احمد شرق پوری نے ، نواز شریف پر طنزیہ الفاظ میں تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ قومی اداروں کو نشانہ بنانے کے لئے سیاسی جماعت کے بالادستی کے بیانیہ کی حمایت نہیں کرسکتے ہیں۔

    Advertisement

     

    پنجاب میں ممبر صوبائی اسمبلی (ایم پی اے) نے انکشاف کیا کہ انہیں صوبے میں پارٹی کے ایک سینئر عہدے کے لئے پیش کیا گیا تھا ، تاہم انہوں نے مسلم لیگ (ن) کے موقف کی حمایت کرنے کی پیش کش کو مسترد کردیا۔

    Advertisement