بچوں کی لمبی چھٹیاں خطرے میں، پرائیوٹ سکولوں نے حکومت کے خلاف بڑا قدم اٹھانے کا فیصلہ کر لیا۔

    بچوں کی لمبی چھٹیاں خطرے میں، پرائیوٹ سکولوں نے حکومت کے خلاف بڑا قدم اٹھانے کا فیصلہ کر لیا۔

    آل پاکستان پرائیوٹ سکولز فیڈریشن (اے پی پی ایس ایف) کے صدر کاشف مرزا نے کہا ہے کہ پاکستان میں اب تک 10،000 کے قریب نجی اسکول بند کردیئے گئے ہیں۔

     

    Advertisement

    کاشف مرزا نے کہا کہ اگر تعلیمی سال ستمبر سے شروع ہوتا ہے تو 20،000 نجی اسکول بند کردیں گے۔

    سماجی رابطہ کی ویب سائٹ ٹوئیٹر پر، انہوں نے اعلان کیا کہ اگر وزیر تعلیم کے فیصلے کے مطابق 11 جنوری کو اسکول دوبارہ نہ کھولے گئے تو لانگ مارچ کیا جائے گا۔

     

    Advertisement

    انہوں نے کہا کہ اسکولوں کی بندش کی وجہ سے 10 ملین کے قریب بچے اسکول چھوڑ چکے ہیں۔

    دریں اثنا، 30 دسمبر (بدھ) کو ہونے والی بین الصوبائی وزیر تعلیم کانفرنس کو ملتوی کرکے 4 جنوری کو شیڈول کیا گیا ہے۔

     

    Advertisement

    وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود آئندہ ماہ کے پہلے ہفتے میں اجلاس کی صدارت کریں گے۔
    23 نومبر کو، وفاقی حکومت نے کوویڈ 19 میں اضافے کے سبب 26 نومبر سے 24 دسمبر تک تمام تعلیمی اداروں کو بند رکھنے کا اعلان کیا تھا۔