پیپلز پارٹی نے استعفوں کے متعلق اپنی بات منوا لی۔ پی ڈی ایم کے اجلاس میں اہم فیصلے۔

    خبر کے مطابق ، اپوزیشن اتحاد کی جانب سے اسمبلیوں سے استعفے دینے کے فیصلے کو موخر کرنے کے بعد ، جاتی عمرا میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آئی ہے۔

     

    مزید پڑھیے: حکومت نے نئے سال کے موقع پر پہلہ تحفہ ہی ایسا دیا کہ عوام کی چیخیں نکل گئی

    Advertisement

     

    ذرائع نے بتایا کہ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) نے پاکستان مسلم لیگ نواز (مسلم لیگ ن) سمیت پی ڈی ایم کے اتحادی جماعتوں کو سینیٹ اور ضمنی انتخابات میں حصہ لینے پر راضی کیا۔ نیز ایوان بالا کے انتخابات کے اختتام تک لانگ مارچ ملتوی کرنے کی سفارش کی۔

     

    Advertisement

    مزید پڑھیے: نون لیگ کے شیر اسپیکر قومی اسمبلی کے سامنے ڈھیر ہو گئے، استعفے اور پارٹی سے بچنے کا انوکھا انداز

     

    پیپلز پارٹی کے فرحت اللہ بابر نے بریفنگ دی جس میں انہوں نے کہا ہے کہ اپوزیشن قانون سازوں کے اسمبلیوں سے استعفے سینیٹ انتخابات کو نہیں روک سکتے۔

    Advertisement

     

    کل کے اجلاس میں رضا ربانی اور اعتزاز احسن ، فاروق ایچ نائک ، لطیف کھوسہ سمیت پیپلز پارٹی کے قانونی ماہرین کی تیار کردہ سفارشات بھی پیش کی گئیں جنہوں نے اسمبلیوں سے استعفی دینے کے فیصلے کی مخالفت کی۔

     

    Advertisement

    پیپلز پارٹی کے رہنماؤں نے خدشہ ظاہر کیا کہ حکمران جماعت کو ایوان بالا میں دو تہائی اکثریت ملے گی۔

     

    Advertisement