اساتذہ اور طالب علموں کے لئے حکومت کا بڑا اعلان، پرائیویٹ اساتذہ کے لئے بھی خوشخبری۔

    زیادہ سے زیادہ بچوں کو اسکولوں تک پہنچانے کی کوشش میں خیبر پختونخوا حکومت نے بدھ کے روز صوبے کے سرکاری شعبے کے تعلیمی اداروں میں دوسری شِفٹ شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

     

    تفصیلات کے مطابق ، صوبائی کابینہ نے صوبے میں پرائمری ، مڈل ، ہائی اور ہائر سیکنڈری اسکولوں میں دوسری شفٹ شروع کرنے کی منظوری دے دی۔

    Advertisement

     

    کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ انہی سرکاری اسکول کے اساتذہ کو دوسری شفٹ میں پڑھانے کے لئے ترجیح دی جائے گی۔

     

    Advertisement

    کمی یا عدم دستیابی کی صورت میں نجی اساتذہ کو مقررہ تنخواہ پر رکھا جائے گا۔ پرائمری اسکول کے اساتذہ کو ماہانہ 12،000 روپے دیئے جائیں گے جبکہ مڈل اسکول کے اساتذہ کو 15،000 روپے ، ایک ہائی اسکول ٹیچر کو 18،000 اور ہائیر سیکنڈری اسکول کے اساتذہ کو بطور وظیفہ 20،000 روپے دیئے جائیں گے۔

     

    تاہم ، کلرک عملے کو 7000 روپے ماہانہ اور درجہ چہارم کے ملازمین کو 5 ہزار روپے دیئے جائیں گے۔

    Advertisement

     

    اس سے قبل 7 جنوری کو ، خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے میں 25،000 اساتذہ کی خدمات حاصل کرنے اور جلد ہی ایک سمارٹ اسکول سسٹم متعارف کروانے کا اعلان کیا تھا۔

     

    Advertisement

    یہاں پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کے پی کے وزیر تعلیم شہرام ترکئی نے کہا تھا کہ نئے تعلیمی سیشن کے آغاز کے ساتھ ہی صوبے کے اسکولوں کو نیا فرنیچر مہیا کیا جائے گا۔

     

    Advertisement