Headlines

    کیا آپ کو بھی بہت زیادہ سوچنے کی بیماری ہے۔۔ ابھی یہ طریقہ آزمائیں اور زندگی آسان بنائیں

    اکثر لوگوں کو سوچنے کی اتنی شدید بیماری ہوتی ہے کہ ہر وقت کچھ نہ کچھ سوچتے رہتے ہیں کوئی بات کرے یا نہ بات کرے۔ دونوں حوالوں سے سوچتے ہیں مستقبل کو لے کر سوچتے ہیں یا ماضی کو لے کر سوچتے ہیں۔ جو کچھ ہو رہا ہے اس بارے میں سوچتے ہیں حتیٰ کہ جب تک سوچ نہ لیں نیند نہیں آتی، سوچوں سے سکون بھی ملتا ہے اور اذیت بھی۔

     

     

    Advertisement

    اس ساری صورتحال سے سمجھ آتا ہے کہ اگر انسان اپنے موجودہ حالات سے مطمئن نہ ہو یا اسے اپنا آپ پسند نہ ہو تو وہ حقیقت سے بھاگنے کے لیے خواب دیکھنا شروع کر دیتا ہے کہ شاید عمل کے بغیر ہی سب کچھ خود بخود ٹھیک ہوجائے گا۔ اور مسائل اکھٹے کرتے رہتے ہیں۔ تو حالت خراب ہو جاتے ہیں اس لئے اپنے مسائل کو ساتھ ساتھ حل کرنا چاہیے۔

     

     

    Advertisement

    ان سوچوں کو نظر انداز کرنے کے بجائے ان کو کاپی میں پوائنٹ بنا کر لکھیں۔ یا کسی قابل اعتبار دوست سے اپنی تمام باتیں شئیر کریں۔ روزانہ سوچنے کے لیےا یک گھنٹہ کا وقت مقرر کریں۔ اور آہستہ آہستہ اس کو کم کر کے پندرہ منٹ تک لے آئیں۔ دن بھر آنے والی سوچوں کا نظر انداز کر کے دماغ کو پیغام دیں کہ یہ میں سوچنے کےمقرہ وقت میں سوچوں گا ۔ایسے دماغ ایک مخصوص وقت میں سوچنے کا عادی ہو جائے گا۔

     

     

    Advertisement