قادری صاحب نے خود ہی دعوت اسلامی کو توڑنے کا طریقہ بتا دیا

بعض لوگوں کے مطابق دعوت اسلامی چند سال تک سیاست کا حصہ بن جائے گی اس بات کا جواب الیاس قادری صاحب نے اس طرح واضح کیا کہ بنفس نفیس سیاست خود میں کوئی بُری چیز نہیں ہے لیکن آج کے حالات میں سیاست ایک بہت برُا شعبہ ثابت ہورہی ہے۔

 

 

Advertisement

پہلے پہل عوام پر صرف پتھر اور لاٹھی چارج کیا جاتا تھا لیکن آہستہ آہستہ اس انداز کو تبدیل کر کے اب لوگوں پر گولیاں چلائی جاتی ہیں۔ اور کسی بھی غیر متعلق شخص کو سیاست میں قدم بھی جمانے نہیں دیے جاتے، سیاست اور حکومت چند خاندانوں کی وراثت بن کر رہ گئی ہے۔

 

 

Advertisement

مولانا کے مطابق آج کے دور میں سیاست کی کمپین چلانا بھی کسی کے بس کی بات نہیں ہاں اگر کوئی خلفائے راشیدین کے دور اقتدار جیسی سیاست ہوئی تو دعوت اسلامی ضرور اس میں شامل ہو گی۔ بغیر گناہ کے آج کے دور میں سیاست ممکن نہیں۔

 

 

Advertisement

مولانا نے بتایا کہ ہماری جماعت میں شامل لوگ غیر سیاسی ذہن کے حامل ہیں۔ ان کی سیاست میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ انھوں نے اپنی جماعت کے سربراہ کو کہا کہ اگر دعوت اسلامی کی جماعت کو کبھی توڑنا ہو تو بس یہ اعلان کر دینا کہ ہم سیاست میں آرہے ہیں۔ خود ہی گھر پہنچ جاؤ گے۔ انھوں نے بتایا کہ دعوت اسلامی کی پالیسی میں شامل ہے کہ اس کے حامل افراد یا یہ جماعت کبھی بھی سیاست میں نہیں آئے گی انشاءاللہ

 

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *