بھارتی کرونا وائرس کی قسم سے متاثر لوگوں کی تفصیلات، ملک میں پھر سے اہم ہدایات جاری

اسلام آباد: نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ (این آئی ایچ) نے کہا ہے کہ ہندوستانی کورونویرس کے ساتھ ایک مسافر 8 مئی کو پاکستان پہنچا۔ اسے اے آر وائی نیوز نے اتوار کے روز رپورٹ کیا۔

این آئی ایچ نے ایک بیان میں پاکستان میں تشخیص شدہ ہندوستانی کورونویرس تناؤ کے معاملے کی تفصیلات جاری کی ہیں۔

این آئی ایچ نے بتایا کہ مسافر کا پاکستان کے ہوائی اڈ ےپر تیز رفتار کورونا وائرس کا ٹیسٹ ہوا اور اس وائرس کی ہندوستانی قسم نے اس کی تصدیق میں تصدیق کردی۔

Advertisement

ذرائع نے بتایا کہ متاثرہ مسافر کو حکومت کے سنگرودھ مرکز میں منتقل کردیا گیا۔ این آئی ایچ کے مطابق ، “مسافر کے کنبہ کے افراد کا بھی وائرس کا پتہ لگانے کے لئے ٹیسٹ کیا گیا لیکن ان کے ٹیسٹ منفی پائے گئے۔”

این آئی ایچ نے اپنے بیان میں کہا ، “سنگرودھ سنٹر میں متاثرہ شخص کی کوویڈ 19 کے جانچ میں تصدیق ہوئی ہے کہ مسافر میں ہندوستانی متغیر اور معمولی علامات بھی پائی گئیں۔”

نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ نے بتایا ، “مسافر کو قرنطین سہولت سے فارغ کردیا گیا تھا اور بیماری سے صحت یاب ہونے کے بعد اسے گھر جانے کی اجازت دی گئی تھی۔”

Advertisement

NIH نے جمعہ کے روز ہندوستان میں دریافت ہونے والے زیادہ متعدی COVID-19 مختلف قسم کے پہلے واقعے کی تصدیق کردی۔

ترجمان این آئی ایچ نے بتایا کہ جانچ پڑتال کے لئے این آئی ایچ کو موصول ہونے والے نمونے میں بھارتی تناؤ پایا گیا تھا۔ این آئی ایچ نے رواں ماہ پاکستان میں جنوبی افریقی کوویڈ۔

ہندوستان کی مختلف حالت کیا ہے؟

Advertisement

وائرس ہر وقت تبدیل ہوتا رہتا ہے ، خود مختلف ورژن یا مختلف حالتیں تیار کرتا ہے۔

ان میں سے بیشتر تغیرات اہم نہیں ہیں – اور کچھ تو وائرس کو کم خطرناک بھی بنا سکتے ہیں – لیکن دوسرے اس کے خلاف ویکسین لگانا زیادہ متعدی اور مشکل بنا سکتے ہیں۔

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *