مسلمانوں کے خلاف بھارتی تنگ نظری پوری دنیا میں پھیلنے لگی، بحرین میں بھی عجیب واقعہ پیش آگیا۔

    بھارتی شہری نے حجاب تنازع کو بھارت کے بعد بحرین میں بھی اُٹھا لیا۔

     

     

    Advertisement

    لاہور (اعتماد ٹی وی) بھارت کی تنگ نظری ساری دنیا نے دیکھ لی ہے۔ بھارت نے اس حوالے سے بے بنیاد وجوہات کی وجہ سے حجاب تنازع کو فروغ دیا۔ اور فیصلہ حجاب کے خلاف کیا کہ یہ مسلم عقائد میں اہمیت کا حامل نہیں ہے۔ اس لئے طالبات کو سکول و کالج یورنیفارم کو ہی پہننا پڑے گا ۔

     

     

    Advertisement

    ایسا ہی بحرین کے شہر مناما میں ایک واقع پیش آیا ہے۔ جہاں پر بھارتی شہری نے مسلمانوں کے لئے کدورت رکھتے ہوئے ایک با حجاب خاتون کو بھارتی ریستوران میں داخلے سے روک دیا۔ بھارتی شہری ریستوران میں بحیثیت مینجر کام کر رہا تھا۔ لیکن بھارتی شہری کو اپنی اس غلطی کا خمیازہ ایسے بھگتنا پڑا کہ بحرین کے حکام نے مینجر کے اس اقدام کو نسل پرستی شمار کر تے ہوئے ریستوران کو سیل کردیا۔

     

     

    Advertisement

    بھارتی مینجر کے خاتون کو روکنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر جاری کی گئی اور دیکھتے دیکھتے ہی وائرل ہو گئی۔ بھارتی ریستوران انتظامیہ کی جانب سے مینجر کو نوکری سے برخاست کر دیا گیا ہے اس کے ساتھ ساتھ بھارتی ریستوران کی انتظامیہ نے سوشل میڈیا کی سائٹس کے ذریعے اپنے معافی کے پیغام کو بھی جاری کیا ہے۔

     

     

    Advertisement

    اس پیغام میں انھوں نے مینیجر کی طرف سے معافی مانگی اور کہا کہ اس سے غلطی ہوئی ہے جو اس نے بھارتی تنازع کو یہاں پروموٹ کرنے کی کوشش کی ۔ اب سے وہ مینیجر ہمارے ریستوران کی نمائندگی نہیں کرتا ۔

     

     

    Advertisement

    اور مینیجر کا ورکنگ ویزا پرمٹ بھی منسوخ کردیا گیا ہے۔ اور اپنے اس اقدام کے بعد ریستوران کی جانب سے 29 مارچ کو مفت کھانے کا اعلان کیا گیا ہے جو اس کی خیر سگالی کے طور پر دیا جائے گا۔

     

     

    Advertisement

    اس کے ساتھ ساتھ بحرین کی ٹورازم اینڈ ایگزیبیشن اتھارٹی نے اس واقعے کے منظر عام پر آتے ہی تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔ اور واقعے کے تحقیقات میں اگر نسل پرستی کا یہ اقدام بحرینی قانون کے مطابق ثابت ہوگیا تو تمام تر ذمہ دار افراد کو دس سال قید کی سزا دی جائے گی۔

     

     

    Advertisement

    اس کے علاوہ تمام سیاحتی مقامات کی انتظامیہ کو ایسی پالیسیز بنانے سے منع کیا گیا ہے جن کی وجہ سے ایسے واقعا ت رو نما ہوں۔ اورملک کا وقار دنیا کی نظر میں کم ہو۔

     

     

    Advertisement