اپنا گھونسلہ ہمیشہ کنویں میں کیوں بناتی ہے؟ ایسی حیران کن وجہ جو آپ کی زندگی بدل دے

    ننھا سا پرندہ دنیا کو ایک بڑا سبق سکھاتا ہے ۔

     

     

    Advertisement

    اعتماد ٹی وی! اللہ تعالیٰ نے انسان اور حیوان کو زندگی گزارنے کے طریقے سکھائے ہیں انسان کو چونکہ عقل کُل عطا کی اس لئے اس نے ترقی کرتے ہوئے اپنی زندگی گزارنے کے طریقوں کو بدلا لیکن حیوان اور چرند پرند آج بھی اُسی طرز پر زندگی گزار رہے ہیں۔ جیسے کہ پرندے اپنی رہائش کے لئے گھونسلے بناتے ہیں۔

     

     

    Advertisement

    چڑیا ، کبوتر اور فاختہ اپنا گھونسلہ گھروں میں ، درختوں اور بیلوں پر بنا لیتے ہیں لیکن جنگلی پرندے ایسے سمجھوتے نہیں کرتے ۔ کوئل اپنا گھونسلہ نہیں بناتی ، اسی طرح ابابیل اپنا گھونسلہ کنویں میں بناتا ہے ۔ اس کے ایسا کرنے کے پیچھے قدرت نے ایک راز رکھا ہے ۔

     

     

    Advertisement

    ابابیل کا کنویں میں گھونسلہ بنانا اپنے بچوں کی تربیت کا ایک حصہ ہے ۔ وہ اپنے بچوں کو سکھاتا ہے کہ گھونسلے سے اُڑان بھرنے کی پہلی کوشش ہی آخری ہو تی ہے ۔ اس میں دوبارہ کی کوئی گنجائش نہیں۔ اگر صحیح اُڑان نہیں بھری تو پھر کچھ باقی نہیں رہے گا۔

     

     

    Advertisement

    ابابیل اپنے گھونسلے سے بچوں کے انڈوں سے نکلنے سے پہلے اگر 25 مرتبہ اُڑان بھرتی ہے تو بچوں کے نکلنے کے بعد وہ 75 مرتبہ اُڑان بھرتی ہے دونوں مل کر 150 اُڑانیں لیتے ہیں تاکہ بچوں کے ذہن میں یہ بات بیٹھ جائے کہ کنویں سے باہر نکل منڈیر پر جانا ہی زندگی ہے ۔

     

    اس میں غلطی کی کوئی گنجائش نہیں اس طرح کسی نے بھی آج ابابیل کے بچوں کو کنویں میں گرے پڑے نہیں دیکھا ۔

    Advertisement

     

     

    ایسے ہی انسان کو اپنی اولاد کو یقین دینا چاہیے ۔ جو والدین اپنی ذات کا یقین اپنے بچوں میں ڈالتے ہیں تو ہی ان کے بچے آئندہ مستقبل میں ایک مضبوط شخصیت بن کر نکلتے ہیں۔

    Advertisement

     

     

     

    Advertisement