وفاقی حکومت نے زیادتی کے مجرموں کے لئے اہم فیصلہ کر لیا۔ عمران خان نے سب کا دل جیت لیا۔

    وفاقی حکومت نے عصمت دری کے مجرموں کو سخت سے سخت سزا دینے کے لئے آرڈیننس لانے کا فیصلہ کیا ہے

     

    یہ فیصلہ حکومت کی قانونی ٹیم کے ایک اجلاس میں کیا گیا جس کی صدارت وزیر اعظم عمران خان نے کی تھی۔

    Advertisement

     

    جہاں انہیں عصمت دری کرنے والوں کو جرمانے اور گواہوں کے تحفظ کے ضوابط کے بارے میں قانونی کارروائی کے بارے میں بریفنگ دی گئی تھی۔

     

    Advertisement

    اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ عصمت دری کے واقعات پر قابو پانے کے لئے حکام کو ایک لائحہ عمل بنانا ہوگا اور اس کے قانون سازی میں تاخیر ملک کے لئے تباہ کن ہوگی۔

     

    ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم خان نے قانون سازی کے لئے قانونی ٹیم کو مزید وقت دینے سے انکار کردیا۔ انہوں نے قانونی ٹیم کو قانون سازی کو حتمی شکل دینے کے لئے دن رات کام کرنے کی ہدایت کی۔

    Advertisement

     

    وزیر اعظم نے کہا کہ عصمت دری کے واقعات کی جلد سماعت کے ذریعے متاثرہ افراد کو انصاف فراہم کرنا چاہئے۔
    اجلاس میں وفاقی وزیر برائے قانون و انصاف ڈاکٹر فروغ نسیم ، وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری اور دیگر متعلقہ عہدیداران نے شرکت کی۔

     

    Advertisement

    قانونی ٹیم کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ عصمت دری کا نشانہ بننے والے بچوں کی شناخت کو خفیہ طور پر برقرار رکھنے کے علاوہ ان کے مستقبل کو محفوظ رکھنے کے لئے ایک جامع منصوبہ پیش کرے۔ متعلقہ حکام نے وزیر اعظم کی ہدایت کے بعد قانون سازی میں تیزی لانے کا فیصلہ کیا۔