اسلام آباد ہائی کورٹ نواز شریف اور شریف خاندان کے وکیل سے قانونی معاونت طلب کرلی۔

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی اپیلوں پر کارروائی کے لئے استغاثہ اور شریف خاندان کے وکیل سے قانونی معاونت طلب کرلی۔

 

 

Advertisement

جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل آئی ایچ سی کے ڈویژن بنچ نے ایوین فیلڈ ریفرنس میں ان کی سزا کے خلاف سابق وزیر اعظم ، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد ریٹائرڈ کپتان محمد صفدر کی اپیلوں کی سماعت دوبارہ شروع کردی۔

 

 

Advertisement

عدالت کو بتایا گیا کہ دفاعی وکیل امجد پرویز اپنے دیگر وعدوں کی وجہ سے آئی ایچ سی کے سامنے پیش نہیں ہوسکے۔ تاہم سینئر وکیل سینیٹر اعظم نذیر تارڑ کمرہ عدالت کے اندر بیٹھے تھے۔

 

 

Advertisement

عدالت کے مطالبہ پر سینیٹر تارڑ نے روسٹرم سے رابطہ کیا اور بینچ کو آگاہ کیا کہ وہ صرف کارروائی کا مشاہدہ کرنے کے لئے وہاں موجود ہے۔

 

 

Advertisement

عدالت نے ان سے درخواست کی کہ وہ آگے کا راستہ تجویز کرے کیونکہ سابق وزیر اعظم کو مجرم قرار دیا گیا تھا۔ جسٹس فاروق نے سوال کیا کہ عدالت اس معاملے میں کیسے آگے بڑھ سکتی ہے۔

 

 

Advertisement

مسٹر تارڑ نے کہا کہ اسی طرح کے معاملے میں انہوں نے سپریم کورٹ میں ایک درخواست دائر کی تھی جس نے اسے مسترد کردیا۔ انہوں نے کہا کہ فوری معاملے میں ایک سیاسی چہرہ ہے۔ انہوں نے عدالت کو مشورہ دیا کہ یا تو برطانیہ سے بیمار نواز شریف کی وطن واپسی تک سماعت ملتوی کردی جائے یا عدم استغاثہ کی اپیل خارج کردی جائے۔

 

 

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *