بھارت نے سندھو موسی والے کا آخری گانا بین کرنے کے بعد کشمیر پر بننے والی ایک اور فلم پر پابندی لگا دی۔

    مودی سرکار نے یوٹیوب پر ایک اور فلم بین کر دی۔

     

    آن لائن (اعتماد ٹی وی) بھارت میں موجودہ سرکار نے سدھو موسے والا کا آخری گانا یوٹیوب سے ہٹا دیا گیا ۔ بھارت میں اب وہ گانا سنا یا دیکھا نہیں جا سکتا ایسا ہی اب بھارت نے کشمیر کے حوالے سے بننے والی شارٹ فلم پر بین لگا دیا ۔

    Advertisement

     

    نو منٹ پر مشتمل اس فلم میں کشمیر کے لوگوں پر بھارت کی جانب سے جو غیر قانونی طور پر غائب کیا جا رہا ہے اور انسانی حقوق کی پامالی کی جا رہی ہے ۔ اس کے متعلق اس فلم میں دکھایا گیا ہے۔

     

    Advertisement

    اس فلم کا نام اینتھم فار کشمیر رکھا گیا ہے اور اس میں بھارتی آئین کے آرٹیکل 360 کی منسوخی سے لے کر ہزار دن مکمل ہونے کے بعد 12 مئی کو ریلیز کیا گیا تھا۔

     

     

    Advertisement

    فلم ساز نے اس فلم میں بھارتی حکومت کی چند منٹ کی ویڈیو کلپس دکھائی گئی جن کے مطابق بھارتی حکومت قلم کی طاقت سے ڈری ہوئی ہے۔ اور پابندی لگانے کا مقصد وہاں اُٹھنے والی آوازوں کو دبانا ہے۔

     

     

    Advertisement

    ٹوئٹر کی جانب سے بھارتی وزیراعظم پر پہلے ہی کرناٹک ہائی کورٹ میں مقدمہ دائر کیا گیا ہے جس میں یہ موقف اختیار کیا گیا ہے کہ بھارت کی مودی سرکار نے ٹوئٹر سے مواد بغیر اجازت کے ہٹایا ہے جبکہ آئی ٹی ایکٹ کے مطابق بھارتی حکومت کے پاس ایسا کوئی اختیار نہیں ہے۔

     

     

    Advertisement