Headlines

    ایسی دیوار جسے حضرت سلیمانؑ نے جنات سے تعمیر کروایا، وہ دیوار اب کس کے قبضے میں ہے۔۔ جانئے

    ایک ایسی مقدس دیوار جو یہودیوں کے لئے اتنی ہی مقدس ہے جتنا مسلمانوں کے لئے خانہ کعبہ مقدس ہے، جس کے سامنے وہ رو رو کر دعائیں کرتے ہیں اسی لئے اس دیوار کا نام دیوارِ گریاں پڑھ گیا تھا۔

    دیوارِ گریاں دراصل ہیکل سلیمانی میں بچ جانے والی ایک دیوار ہے جو یہودیوں کی پہلی عبادت گاہ تھی، پر اس کو تابوتِ سکینہ کے رکھنے کے لئے اور عبادت کے لئے حضرت داؤدؑ نے پہلی بار تعمیر کروانا شروع کیا تھا جو اس وقت یہودی قوم یا بنی اسراعیل کے حکمران تھے مگر اپنی زندگی میں وہ اس کو مکمل نہ کر سکے لہٰذا حضرت سلیمانؑ نے اسے جنات سے مکمل کروایا۔

    یہودی اس تابوت کو سامنے رکھ کر دعا کر کے ہر قسم کی پریشانی کو حل کر لیا کرتے تھے۔ مختلف قوموں کے ساتھ جنگوں کے دوران اس صندوق کو اپنے لشکر کے آگے رکھا کرتے جس کی برکت سے اللہ تعالیٰ ان کو فتح عطا کرتا۔

    Advertisement

    اسی صندوق کے لئے حضرت داؤدؑ نے ہیکل کو تعمیر کرنے کا سوچا مگر دوسری بار یہودی قوم کی بدا عمالیوں کی وجہ سے یروشلم پر قبضہ کر کے اس کی اینٹ سے اینٹ بجا دی۔ جس کے بعد تابوتِ سکینہ ایسا غائب ہوا کے دوبارہ کبھی نہیں ملا۔
    اور ہیکل کی بس ایک دیوار ہی باقی رہ گئی جس کو دیوارِ گریاں کہتے ہیں۔